آسٹریلیا نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا۔

کینبرا: آسٹریلیا نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا فیصلہ واپس لے لیا۔ تفصیلات کے مطابق آسٹریلیا کا کہنا ہے کہ وہ 2018 ء میں سابق وزیر اعظم اسکاٹ موریسن کی حکومت کے فیصلے کو تبدیل کرتے ہوئے مغربی یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم نہیں کرے گا۔ انہوں نے واضح کیا کہ مغربی بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا فیصلہ سابق وزیر اعظم موریسن نے سیاسی فائدے کے لیے کیا تھا، جس پر آسٹریلوی عوام کو تکلیف ہوئی تھی۔ہم مغربی بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا فیصلہ واپس لیتے ہیں۔ پینی وونگ نے کہا آسٹریلیا کا سفارت خانہ بدستور تل ابیب میں کام کرتا رہے گا۔
وزیر خارجہ پینی وونگ نے بیان میں کہا ہے کہ آج حکومت نے آسٹریلیا کے سابقہ اور دیرینہ مؤقف کی تصدیق کی ہے کہ یروشلم ایک حتمی نوعیت کا مسئلہ ہے، جسے اسرائیل اور فلسطینی عوام کے درمیان امن مذاکرات کے ذریعے ہی حل کیا جانا چاہیے۔
انہوں نے کہا بیت المقدس کے معاملے کو اسرائیل اور فلسطین مذاکرات سے حل کریں آسٹریلیا دونوں ریاستوں کے حل کے لیے پُر عزم ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں