اعظم سواتی کے مبینہ ویڈیو دعوے پر 14 رکنی پارلیمانی کمیٹی تشکیل دے دی گئی۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینیٹر اعظم سواتی کی مبینہ ویڈیو لیک کے معاملے کی تحقیقات کے لیے 14 رکنی پارلیمانی کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے اعظم سواتی کے بیان پر پارلیمانی لیڈرز پر مشتمل کمیٹی بنانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ سینیٹر اعظم سواتی کی ویڈیو سے متعلق انکشاف قابل مذمت اور افسوسناک ہے جس سے دلی رنج اور تکلیف پہنچی۔

انہوں نے کہا کہ سینیٹراعظم سواتی ایک ایماندار اور قابل عزت شخصیت کے مالک ہیں، ان کو کوئٹہ بطور مہمان بہترین اور محفوظ ترین رہائش فراہم کی۔ صادق سنجرانی نے کہا کہ تمام سینیٹرز بلا تفریق قابل احترام اور خاندان کے مانند ہے، سینیٹراعظم سواتی میرے خاندان کے رکن کی طرح ہیں جو بات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں، بطورمسلمان وبلوچ اخلاقی اقدار سے بخوبی آگاہ ہوں۔ انہوں نے مزید کہا کہ سینیٹر اعظم سواتی ایوان کے باعزت رکن ہیں، ان کی تکالیف کا ادراک ہے، وہ اور ان کی اہلیہ تہجد گزار ہیں اور ماں کا درجہ رکھتی ہیں، اعظم سواتی میرے بڑے بھائی ہیں، ان کے ساتھ خاندانی تعلقات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سینیٹراعظم سواتی کی ازدواجی زندگی سے متعلق ویڈیو پر سینیٹ کی کمیٹی تشکیل دی جارہی ہے، پارلیمانی لیڈرز پر مشتمل کمیٹی میں تمام جماعتوں کے رہنما شامل ہوں گے۔

صادق سنجرانی نے کہا کہ کمیٹی اعظم سواتی کی ویڈیو بنانے اور لیک کرنے کا جائزہ لے کر رپورٹ مرتب کرے گی اور اپنی رپورٹ مرتب کر کہ ایوان میں پیش کرے گی۔ خیال رہے کہ گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس کے دوران اعظم سواتی نے دعویٰ کیا تھا کہ ان کی بیوی کو ایک ذاتی ویڈیو موصول ہوئی جس میں وہ اور ان کی بیوی ہیں اور یہ ویڈیو اس وقت بنائی گئی جب وہ کوئٹہ گئے تھے اور سپریم کورٹ کے جج کے جوڈیشل لاجز میں قیام کیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ چند روز قبل میں نے کہا تھا کہ مجھے اس لیے کوئی دبا نہیں سکتا کیونکہ میں نے کوئی کرپشن نہیں کی، اس ملک کی کوئی چیز لی نہیں بلکہ اس کو دیا ہے، میں نے یہ بھی کہا تھا کہ میری کوئی غیر اخلاقی ویڈیو میرے ملک کے لوگوں، مقتدر حلقوں کے پاس نہیں ہو گی لیکن میں غلط تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ اس ملک پاکستان میں ایک خاوند اور بیوی کے تقدس کو پامال کیا گیا اور میں حیران ہوں کہ اس کام پر مامور لوگوں نے سوچا کہ اگر اس کی کرپشن کی فائل نہیں ہے، اس کی کوئی غیراخلاقی ویڈیو نہیں ہے تو پھر اس کی اور اس کی بیوی کی ویڈیو نکال لیں۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے اعظم سواتی کی اہلیہ کی پرائیوسی کی مبینہ خلاف ورزی کی مذمت کرتے ہوئے چیف چسٹس آف پاکستان سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ اس معاملہ پر از خود نوٹس لیں۔ جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق احمد خان نے سینیٹر اعظم سواتی کے ساتھ پیش آنے والے مبینہ واقعے پر چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے نام خط لکھا جس میں اُن سے واقعے کی تحقیقات کے لیے تمام سیاسی جماعتوں پر مشتمل پارلیمانی کمیٹی بنانے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں